Maryam Nawaz مریم نواز 9,587

مریم نواز :جعلی حکومت کو این آر او نہیں دیں گئے۔

لاہور :- مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ حکومت پی ڈی ایم سے این آر او مانگ رہی ہے جعلی حکومت کو این آر او نہیں ملے گا ۔
آج سکھر روانگی سے پہلے مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوۓ کہا ہے کہ پی ڈی ایم میں شامل تمام پارٹیوں کا اپنا اپنا منشور اور اپنے اپنے مفادات ہیں اپنا اپنا نظریہ ہے مگر کچھ چیزیں ہیں پاکستان کی خاطر ہم سب اکٹھے اور متحدہ ہیں ۔
علی درانی کی کوٹ لکھپت جیل میں مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف سے ملاقات کے حوالے سے بات کرتے ہوۓ مریم نواز نے کہا کہ اس سے پہلے بھی حکومتی وزراء کی جانب ہم سے بہت بار رابطے کرنے کی کوشش کی گئی ہے جب یہاں سے کچھ نہیں ملا تو ادھر اُدھر جا رہے ہیں ۔مریم نواز نے کہا کہ میاں نواز شریف نے یہ فیصلہ لیا ہے اور مولانا فضل الرحمن اور پی ڈی ایم کی تمام جماعتیں اس بات پر متحدہ ہیں کہ اب اس جعلی حکومت سے کوئی بات نہیں ہو گی اور اس جعلی حکومت کو کسی قسم کا کوئی بھی این آر او نہیں دیا جاۓ گا۔ مریم نواز نے مزید کہا کہ جیل میں فیملی کو تو ملنے نہیں دیا جاتا مگر جن پر شفقت ہوتی ہے انہیں ملنے کے اجازت مل جاتی ہیں

3مسلم لیگ (ن) کے تمام ارکان پارلیمنٹ نے استعفے جمع کروا دئے ہیں ۔ رانا ثناءاللہ


مردم شماری کے حوالے سے پوچھے گئے سوالات کے جواب میں مریم نواز نے کہا کہ یہ حکومت ہے ہی جعلی اور حکومت کو بھی پتا ہےکہ ہم اس کارگردگی سے اگلا الیکشن نہیں جیت سکتے انہوں نے 2018 کا الیکشن بھی دہندلی سے جیتا ہے اور مریم نواز نے کہا ہے ملک کاجو حال انہوں نے کر دیا ہے اس کا اللہ ہی حافظ ہے روز کابینہ کا اجلاس ہوتا ہے مگر انہیں نہ تو مہنگائی نظر آتی ہے اور نہ ہی جو انہوں نے غریب عوام کا حال کر دیا ہے وہ نظر آتا ہے ۔ مریم نواز نے کہا کہ کابینہ میں بیٹھے وزراء اور جعلی وزیراعظم اس کی نظریں پی ڈی ایم پر لگی ہوتی ہیں کہ دیکھو بلاول نہیں آیا پی ڈی ایم ٹوٹ گئی اگر مریم کسی جگہ نہیں گئی تو وہ ناراض ہو گئی ہے یہ ہوگیا ہے وہ ہو گیا ہے ۔ مریم نواز نے کہا کہ مجھے ان کے ذہینی حالت پر رحم آتا ہے ۔
صحافی نے پوچھا کہ شہباز شریف اور میاں نواز کو الگ کرنے کی کوشش بھی ہو سکتی ہےکیا یہ علی درانی کی ملاقات تو مریم نواز نے کہا کہ یہ بات تاریخ سے آپ کو پتا چل جاۓ گی کہ شہباز شریف نے ہمیشہ ہی میاں صاحب کے فیصلوں کی حمایت کی ہے اور شہباز شریف نے میاں صاحب اور پارٹی سے وفا کی ہے اگر وہ وفادار نہ ہوتے اور پارٹی کو چھوڑ کر چلے جاتے تو وہ اب وزیراعظم ہوتے مگر انہیں میاں صاحب کا ساتھ دینے کی وجہ سے وہ اور انکا بیٹا آج جیل میں ہیں ۔
دو ن لیگی قومی اسمبلی کے ارکان کے استعفے کے بارے میں پوچھا گیا کہ وہ تو کہتے ہیں کہ ہم نے استعفے نہیں دۓ تو مریم نواز نے کہا کہ انکے بارے میں تو کوئی گومان بھی نہیں کر سکتا کہ وہ ایسا کرۓ گے خیر کوئی بات نہیں مگر کابینہ میں یہ بات بھی کی جا رہی ہے کہ (ن) لیگ کے وزراء استعفے نہیں دیں گے تو میں بتا دوں کہ پنجاب اسمبلی کے 160 میں سے 159 اراکین کے استعفے میرے پاس آ گے ہیں اور قومی اسمبلی کے 95 فیصد کے استعفے بھی آ گے ہیں اور جیسے ہی پی ڈی ایم کوئی فیصلہ کرے گی کہ استعفے کب دینے ہیں تو استعفے جمع کروا دئے جایں گے
سینیٹ الیکشن کے بارے میں کہا کہ پارٹی میں اکثریت کی یہ راۓ ہے کہ سینیٹ الیکشن نہ لڑا جاے مگر پی ڈی ایم جو بھی فیصلہ کرے گی ہم وہی کریں گئے

https://urdu.geo.tv/

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

مریم نواز :جعلی حکومت کو این آر او نہیں دیں گئے۔” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں